Taliban & TTP Archive

کابل بم دھماکہ: تکفیری دیوبندی دہشت گردی پہ کمرشل لبرل کے ہاں سناٹا کیوں ہے؟ – گل زہرا رضوی: کابل بم دھماکہ تکفیری دیوبندی دہشت گردی بارے ایک اور المناک یاد دہانی ہے۔ تکفیری دیوبندیت کا پاکستان اور افغانستان کے اندر شیعہ کا قتل عام بہت چالاکی اور آسانی سے کمرشل لبرل مافیا کی کوششوں سے چھپادیا جاتا
#RussiaBashing : A common tactic by Pakistani and US Elites:   In Pakistan, anyone who came out and opposed the policy of Jihadi proxies which were mainstreamed by Military dictator General Zia ul Haq, was quickly attacked as an Iranian fifth columnist, a RAW agent and a Soviet sympathiser.
Kabul Bomb attacks yet another tragic reminder of #DeobandiTerrorism:   The routine massacre of Shias in Pakistan and Afghanistan by Takfiri Deobandis from #ISIS– affiliated groups like ASWJ/Sipah Sahaba is quickly glossed over by the liberatti. Most times, it does not even deserve a mention while proportionally lesser
پھر ہمیں قتل ہوئیں یارو چلو – پیجا مستری: شہر جاناں میں اب باصفا کون ھے دست قاتل کے شایان رھا کون ھے غصہ اور شرم اس بات پر آتی ھے کہ شہر جاناں میں دست قاتل کے شایان اب صرف ستر سال کے وہ جوان بچے ھیں
شبِ ہجراں کو آنسوؤں کی زکوٰۃ دینے والا شاعر – حیدر جاوید سید:   بیس سال پہلے جاڑے سے سرد جنوری کی ایک شام کی طرف بڑھتی ہوئی سپہر کے وقت اردو اور سرائیکی کے بلند پایہ شاعر اور ترقی پسند سیاستدان سید محسن نقوی مون مارکیٹ اقبال ٹاؤن میں دہشت گردی
APS incident – Molvi Tariq Jameel’s message – by Peja Mistry: Note of the author: Please note I wanted to title this article as “APS – 144 suicide bombers” but it appears to be provocative although ironically the readers of this article will not consider molvi Tariq Jameel’s message as
سانحہ پشاور کے تین سال، تکفیریت کا دیو آج بھی بے قابو: پاکستان میں تکفیری دہشتگردی کی تاریخ بہت تلخ ہے لیکن اس تاریخ میں سانحہ اے پی ایس پشاور جیسا المناک سانحہ کوئی دوسرا رونما نہ ہوا، جس میں معصوم بچوں کو بیدردی سے قتل کیا گیا۔ ایسا سانحہ جس
Pakistan’s Civil society/commercial liberal Mafia needs to get past it’s Bhutto phobia:   Since Zulfiqar Ali Bhutto took office, Pakistan’s upper-middle classes and business elite have not relented in their vicious and visceral hatred of the Bhuttos and the PPP. Some of this is based on the actual mistakes, missteps and
Shame on PPP for maintaining a political discourse at their political rally:   There is no self righteous indignation and right wing hypocrisy ala Nawaz Sharif/Imran Khan/Jamaat e Islami/JUI There are no empty threats and bully posturing ala Nawaz Sharif – the current paymaster ooops, Patron Saint of Pakistan’s commercial liberal
سرزمین حجاز میں یزید عصر کا ظہور: سعودی شہزادہ ولی عہد محمد بن سلمان کیا چاہتا ہے؟ – پروفیسر محمد ایوب: یہ 60 ہجری /680 عیسوی کا واقعہ ہے، جب حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی وفات کو 50 سال ہی ہوئے تھے،33 سالہ اموی بادشاہ یزید نے حضرت امام حسین کی قیادت میں اس کی حکمرانی کے
تکفیری وہابی فاشزم کی شام اور عراق میں شکست : تصوف کے ماننے والوں پہ حملے تیز ہوگئے – محمد عامر حسینی:   مصر: الصوفيّون في مرمى نيران التكفيريّين ‘لكن ثمة عنصراً جوهرياً، لا يمكن تجاهله في مذبحة الروضة، ويتمثل في الهدف الرمزي للهجوم الإرهابي، وهو الحالة الصوفية، بما تشكله من مكوّن أساسي في التراث الديني الذي لطالما أضفى على التديّن
انہوں نے جنازے پہ تیر برسائے اور یہ رونے والوں پہ گولیاں و بم برساتے ہیں – مستجاب حیدر نقوی: آج 28 صفر المظفر ہے۔ حضرت ابوھریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ اس دن وہ مسجد نبوی کے احاطے میں بیٹھے تھے کہ اعلان ہوا : يا أيّها الناس! مات اليوم حبّ رسول الله (صلى الله عليه
سعد حریری کے لئے سعودی فضا مہربان نہیں رہیں – مستجاب حیدر نقوی: برطانوی صحافی رابرٹ فسک جنھوں نے ہمیشہ مڈل ایسٹ کے معاملات پہ اپنے پڑھنے والوں کو ماضی،حال اور مستقبل تین زمانوں کو ایک مستقل لہر کی شکل میں بہتے دکھایا ہے اور اکثر ان کی پیشن گوئی ٹھیک خیال
شہادت امام حسن مجتبی : ہم مسموم ہوتے یا مقتول – مستجاب حیدر نقوی: اٹھائیس صفر المظفر ،پچاس ھجری /23 مارچ 970ء کا دن تھا جب مدینہ کے اندر منادی کرنے والے نے منادی کرنا شروع کردیا يا أيّها الناس! مات اليوم حبّ رسول الله (صلى الله عليه وآله) اے لوگو! آج حب
چور مچائے شور – عامر حسینی: کچھ لوگ اپنے آپ کو بہت بڑا مزاح نگار خیال کرتے ہیں۔ایسی دور کی کوڑی لاتے ہیں کہ بس ان کی اپنی ذہنیت پہ ماتم کرنے کو دل چاہتا ہے۔کہا جارہا ہے کہ بلوچستان بلیدہ کے پہاڑی سلسلے کے
مجبور و محصور لبنانی وزیراعظم کا ٹی وی انٹرویو اور سعودی عرب کے عزائم – مستجاب حیدر نقوی:   لبنانی وزیراعظم سعد حریری کے استعفے کا ڈرامہ جب مطلوبہ نتائج پیدا کرنے میں ناکام رہا تو سعودی عرب نے ایک لکھا لکھایا سکرپٹ حریری کے حوالے کیا اور اس کی ذاتی ٹی وی چینل سے اسی سکرپٹ
آل سعود کے شہزادوں کی لڑائی: ساجھے کی ہنڈیا میں چھید ۔ پروفیسر رشید المضاوی:   نوٹ: روزنامہ الاخبار بیروت نے 11 نومبر کو سعودی عرب کے حالیہ اقدامات پہ ایک خصوصی گوشہ ‘ابن سلمان کا پاگل پن: نظربندی اور لبنان کی تباہی کی پرانی سعودی روایت’ کے عنوان سے شایع کیا ہے۔اس گوشے
اداریہ : کیا سعد حریری کی لبنان واپسی ہوگی ؟-روزنامہ الاخبار بیروت: ( لبنان کے ایک اخبار میں سٹاروا جابرا کا ایک کارٹون شایع ہوا جس کا عنوان ہے ‘استقنا لک یا بیروت ۔ہم نے تچھے ڈھونڈ لیا ہے اے بیروت۔۔۔۔اور نیچے موت اور جنگ کے دیوتا ہیں جو لبنان کی
ہزار داستان ہزارو ں کے قتل کی – مستنصر حسین تارڑ: پاکستان میں خاص طور پر کوئٹہ میں اگر آپ گورے چٹے ایک منگول ناک والے ہزارہ قبیلے سے ہیں تو یوں جانیے آپ نشانہ پر ہیں ،آپ کی موت طے ہوچکی ہے اور اگر آج نہیں تو کل آپ
اداریہ تعمیر پاکستان : دہشت گردوں اور فرقہ پرستوں کو معافی کے پروانے کون جاری کررہا ہے ؟: خبر ہے کہ وفاقی وزرات داخلہ نے جھنگ حلقہ پی پی 78 سے منتخب رکن صوبائی اسمبلی مسرور جھنگوی ( بانی انجمن سپاہ صحابہ پاکستان حقنواز جھنگوی کے بیٹے) کا نام فورتھ شیڈول سے نکال دیا ہے۔جبکہ مسرور جھنگوی
کراچی میں چہلم امام حسین کے موقعہ پہ شہر کے گوشے سے لوگ مرکزی جلوس میں شریک: ناجائز ناکہ بندیوں اور راستوں کی بندش بھی عوام کو شہدائے کربلاء سے عقیدت کا اظہار کرنے سے نہ روک سکیں۔ کولاچی کے سائیں کی رپورٹ ایک بار پھر چہلم امام حسین رضی اللہ عنہ کے موقعہ پہ لوگوں
Thomas Friedman’s Justification of Ibne Salman’s Palace Coup is Pathetic:   There is no difference between establishment Democrats and Republicans in sucking up to Saudi despots. Before watching Thomas Friedman sucking up to the palace coup of Ibne Salman, make sure you have a puke bucket ready. Major obfuscations
Look past SOC’s elitism – the issue of inappropriate behaviour by doctors deserves a proper debate:   As more details emerge, it is becoming clear that the AKUH doctor engaged in an inappropriate and unprofessional act by sending a Facebook friend request to a patient. From a gender perspective, his act was uncomfortable to his
پاکستان میں شیعہ نسل کشی کے مجرم آزاد کیوں ؟:   آج سے ٹھیک ایک سال پہلے یعنی 29 اکتوبر 2016 کراچی ناظم آباد میں کالعدم لشکر جھنگوی ، اہلسنت و الجماعت کی فائرنگ سے 5 شیعہ شہید ہوئے تھے جن میں تین سگے بھائی باقر عباس زیدی، نیر
How Celeb bullying marred an important debate on Social Media ettiquites in Pakistan:   Narcissism, hypocrisy and Elitism make it difficult to have a reasonable and objective discussion on sending Facebook friend requests. The coordinated cloud of celebrity activists lecturing the rest of Pakistan has barely resulted in social evolution. This tribe
The brutal assault on journalist Ahmad Noorani must be condemned:   There are several occasions when we disagree with journalists and find their observations to be compromised. That does not justify violence. Ahmad Noorani was the only mainstream journalist/media that disagreed with the PML N government/right wing/Taliban/Commercial liberal/civil society
انتظار – عامر حسینی: Who can know from the word goodbye what kind of parting is in store for us. Arundhati Roy انتظار دن ڈھل رہا 24 اکتوبر کا اور شام اتر رہی ہے آہستہ آہستہ میں تمہاری قبر پہ بیٹھا تمہیں یاد
احسان فراموش زید حامد کی شرانگیزی:   امام علیؑ کا فرمان ہے کہ جس پر احسان کرو، پھر اُس کے شر سے بچو۔ زید حامد بھی ایسا ہی ایک احسان فراموش ہے۔ زیادہ عرصہ نہیں گزرا جب زید حامد عمرہ کرنے سعودی عرب گیا تھا
ٹیلوٹما کے نام کھلا خط: ڈئیر ٹیلوٹما میں تمہیں یہ خط جنت گیسٹ ہاؤس پرانی دہلی قبرستان کے پتے پہ ارسال کررہا ہوں۔مجھے پتا ہے کہ پرانے دہلی شہر کے تاریخی قبرستان میں نہ تو یہ یہ گیسٹ ہاؤس موجود ہے اور نہ ہی
کوفہ شہر : ایک کتاب ۔ایک تاریخ – کے بی فراق گوادر:   جب فکشن کا ایک برتر نمونہ A Tale of two city ایسا ناول پڑھا تو اس بابت کئی پہلو روشن ہوگئے چونکہ شہر اپنے آپ میں ایک کردار حوالہ بھی رکھتے ہیں اور اس کو بڑے تناظر میں
آج تم یاد بے حساب آئے – عامر حسینی: میری کتاب ‘کوفہ: چھاؤنی سے مسلم سیاسی،سماجی تحریکوں کا مرکز بننے تک’ کا مسودہ جب میں نے مکمل کرلیا اور اس کا پیش لفظ لکھنے بیٹھا تو اس وقت ایک ہی خیال دامن گیر تھا کہ میری یہ پہلی
تکفیریوں کی پہچان مگر کیسے ؟ – محمد عامر حسینی: صوبہ بلوچستان،ضلع جھل مگسی،واقع عین برلب سرحد صوبہ سندھ ،علاقہ فتح پور شریف،درگاہ صوفی سنّی حضرت رکھیل شاہ قادری (پیدا ہوئے1854ء) تکفیری دیوبندی فاشسٹ پھٹ گیا،20 شہید اور 50 زخمی ہوئے۔ مذکوہ بالا درگاہ پہ یہ دوسرا حملہ،پہلا مارچ
جھل مگسی فتح پور درگاہ حضرت رکھیل شاہ پہ تکفیری دیوبندی پھٹ گیا – ریاض الملک الحجاجی: عطیہ خون دینے سے پہلے مار دئے جانے والے۔کرہ ارض پہ احمقوں کی شرح میں اضافہ پاکستان میں جب اکثریت عاشورا محرم منانے میں مصروف تھی تو ایک دوسرے سے بظاہر 180 درجے کے زاویے پہ الگ کھڑے رہنے
عزاداری – شیعہ سنی مسلمانوں کا مشترکہ ورثہ: دنیا بھر کی طرح پاکستان میں بھی کل یوم عاشور امام مظلوم امام حسین (ع) کی عظیم قربانی کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوے روایتی انداز میں منایا گیا ، گزشتہ دو تین دہائیوں میں یہ پہلا عاشورا اور
راولپنڈی جلوس عاشورہ میں شریک اہل سنت برادران – سید رفعت سبزواری: یہ تصویر کل یومِ عاشور عین فوارہ چوک راجا بازار راولپنڈی کی ہے جب نمازِ ظہرین ادا کی جا رہی تھی تو ایک اہلسنت عزادار بھائی بھی نماز میں شریک تھا میں نے فورا ساتھ کھڑے دوست سے کہا
Tabuts or Tazias in Lahore – by John Campbell:   Note: This write up has been taken from the book ‘THE BRAHMANS, THEISTS AND MUSLIMS OF INDIA: Studies of Goddess-worship in Bengal^ Caste^ Brahmaism and Social Reform^ with descriptive Sketches of curious Festivals Ceremonies and Faquirs’ Written BY
ذکر مصائب اہل بیت اور کیانی کا گاؤں – عمران کیانی: میرا تعلق روایتی سنی گھرانے سے ہے پہاڑوں میں آباد ان لوگوں میں دین کے متعلق سوجھ بوجھ نماز روزہ سے زیادہ نہیں ہے ہر قسم کی فرقہ واریت سے پاک نہایت پرامن علاقہ ہے وہاں کے رسم رواج
نیویارک میں محرم کا جلوس – محمد حسین: نیویارک کی سب بڑی یونی ورسٹی ’’نیویارک یونی ورسٹی‘‘ سمیت نیویارک اور نیوجرسی (پچاس میں سے صرف دو ریاستیں) کے جڑواں شہروں میں انگریزی، اردو، عربی، فارسی سمیت مختلف زبانوں میں مختلف اقوام کے لوگوں کی جانب سے تقریبا
Muharram and persecution of Shias in Pakistan – by Muhammad Tariq:   Being a journalist I go to attend many press briefings made by provincial, district civilian administrations including Police on law and order in Punjab. Last series of meetings I attended in start of Muharram. In these meetings members
تاریخ کوفہ: کچھ گم گشتہ پہلو — عامر حسینی کی کتاب کوفہ پہ تبصرہ: میاں ارشد فاروق: چند یوم قبل برادرم عامر حسینی کی کتاب “کوفہ: فوجی چھاؤنی سے مسلم سیاسی تحریکوں کا مرکز بننے تک” کا مطالعہ کرنے کا موقع ملا جو ایک تحقیقی مقالہ ہے اور اسکی قوت استدلال اور زیرک بیانی نے مجھے