Urdu Articles Archive

میں کیسا مسلمان ہوں بھائی: حسین حیدری ممبئی کے رہنے والے ہیں اور بدقسمتی سے ان کا جو خاندانی پس منظر ہے وہ شیعہ ہے اور یہ ایک ایسی بات ہے جو کسی شخص کی کہی ہوئی بات کو دارالعلوم دیوبند اور سعودی وہابی
اداریہ تعمیر پاکستان: امریکی سینٹ لوئس شہر میں یہودی قبرستان میں مسمار قبروں کے کتبوں کو دوبارہ لگانے کی مہم چلانے والی کونسل آف امریکن مسلم ریلشنز سلفی۔دیوبندی تکفیریوں کے ہاتھوں تباہ ہونے والے مزارات کی تعمیر نو کے لئے چندہ مہم کب شروع کرے گی ؟: امریکی ریاست میسوری کے شہر سینٹ لوئس میں ایک قدیم یہودی قبرستان میں بنی درجنوں قبروں پہ لگے کتبوں کو شرپسندوں نے توڑ پھوڑ دیا۔اور اسے اینٹی سیمیٹ/سامیت مخالف گروہوں کی کارستانی قرار دیا جارہا ہے۔اور اکثر لوگوں کا
دہشت گردی بارے دیوبندی موقف: اپریل 2010ء کو جامعہ اشرفیہ لاہور میں ملک بھر سے ڈیڑھ سو کے لگ بھگ سرکردہ علمائے کرام سر جوڑ کر بیٹھے۔ ایک بھرپور اور نمائندہ اجتماع منعقد ہوا جس کے شرکا کا تعلق دیوبندی مسلک سے وابستہ دینی
جمیعتِ علمائے اسلام (ف) کے صوبائی وفد کی سہون آمد:     جمیعتِ علمائے اسلام (ف) کے صوبائی وفد کی سہون آمد اور درگاہ حضرت لعل شہباز قلندر پر دعا کرنا ایک احسن اقدام ہے مگر موجودہ حالات ان سے زیادہ کا تقاضہ کرتے ہیں – ہم نے شکارپور
قلندر کا دالان بہت خطرناک – وسعت اللہ خان: ایسا ہی ہے لعل و لال قلندر لال جہاں قبر پر پڑی لال چادر خون کے لال اڑتے چھینٹے یوں جذب کر لے جیسے جزو کل میں شامل ہو جائے، اور پھر اگلی فجر سے دما دم مست قلندر
شہباز قلندر بم دھماکے کی بنیادی ذمہ داری کس پہ ہے ؟: ہم جبران ناصر جیسے سول سوسائٹی کے ایکٹوسٹوں کی برہمی کے مخصوص اہداف اور اصل کو چھوڑ کر فرع پہ حملہ آور ہونے کے حربوں سے اکثر ان کے مقصد بارے مشکوک ہوجاتے ہیں۔لال شہباز قلندر کے مزار پہ
وہ دھماکہ کریں،تم کلچر کو پابند سلاسل: فروری کی 16 تاریخ اور دن جمعرات کا اور شام کے سات بجنے میں 5 منٹ باقی تھے جب سندھ کے ضلع دادو کے تعلقہ سہیون شریف میں واقع شیخ عثمان مروندی الحسینی المعروف لال شہباز قلندر کے مزار
لاہور دھماکہ: آپریشن غازی کے نام سے لال مسجد کے خو ارج ملک پر حملہ آور ہیں – زید حامد:   پاکستان کے دفاع تجزیہ کار زید زمان حامد نے لاہور بم دھماکہ کے خلاف مائیکرو بلاگ کی ویب سائٹ ٹوئیٹر پر اپنا ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کے خلاف خوارج کی اس نئی جنگی مہم کو
کرم ایجنسی کے قبائل کو درپیش سنگین خطرات اور ریاستی بے حسی – شفیق طوری: کرم ایجنسی جغرافیائی اور اسٹریٹیجک لحاظ سے دیگر قبائلی ایجنسیوں سے مختلف ہے۔ اپر کرم جو شیعہ اکثریتی آبادی پر مشتمل ہے تین سو سال سے یہاں آباد ہیں۔ اس علاقے کی دفاع افغانستان کے حکمرانوں کے وقت بھی
باغی لڑکی – از عامر حسینی: باغی لڑکی باغی لڑکی : امرتا پریتم کا فون نمبر مل سکتا ہے؟ ع۔ح : ہنستے ہوئے ۔ کیوں کیا ضرورت پڑگئی؟ باغی لڑکی : ان کو کہنا ہے حنا شاہنواز جیسی ہزاروں عورتوں بارے بھی کوئی وین لکھے
حنا شاہنواز /صادقین ، سنناہٹ اور تیزایبت: میں ایک بیمار آدمی ہوں ، معدے کی تیزایبت کا شکار  پھر بھی چین سموکر، پیروں ،ہاتھوں اور سر کے مسلسل درد کا شکار مگر مرے دل اور دماغ تروتازہ رہتے ہیں اور ان میں خیالات و احساسات کے
حافظ سعید اور جماعت دعوہ کی مخالفت کیوں نہ کی جائے ؟: ایک صاحب نے اپنی فیس بک وال پہ سٹیٹس لگایا ہے کہ پاکستانی اہل تشیع سے درخواست ہے کہ حافظ سعید کے خلاف امریکی محاذ کا حصّہ مت بنیں۔حافظ سعید کوئی فرقہ پرست قاتل نہ تھا۔اس کی آواز صرف
لال مسجد کے دہشت گردوں خلاف قانونی جد و جہد کرنے والا ثمر عباس تا حال لا پتہ: کل ایک سال مکمل ہوگیا جب خرّم زکی کے ساتھ داعش کے پاکستان میں نمائندہ اور بھرتیکار اعبدلعزیز برقع پوش کے خلاف، اسکی کئی ویڈیوز منظر عام پر انے کے بعد ایف آی آر کٹوانے ابپارہ تھانے جانے کا
مسلم لیگ نواز اور کالعدم تکفیری دہشت گردوں کا معاشقہ: کالعدم اہلسنّت والجماعت سابقہ انجمن سپاہ صحابہ کی ذیلی تنظیم کالعدم لشکر جھنگوی کے رہنما مسرور جھنگوی کی سپیکر پنجاب اسمبلی رانا محمد اقبال کے ساتھ ایک یادگار تصویر. دوسری تصویر میں وزیر مذہبی امور سردار یوسف اسی دہشتگرد
ریاست مخالف بیانیہ کیا ہوتا ہے؟: پاکستان کی آبادی بیس کروڑ ہے۔ اِں بیس کروڑ پاکستانیوں میں نہ تو ہر شخص کسی غیر ملکی فنڈز پر چلنے والی این جی او کا کارکن ہے اور نہ ہی مخصوص آقاوں کے چندے پر چلنے والی تنظیموں
(Muhammad Ahmed Kamal ) دہشت گردی کی نئی لہر – محمّد احمد کمال: افغانستان کے شہر قندھار میں متحدہ عرب امارات کے سفارتکاروں پر ۱۰ جنوری کو ہونے والے دہشت گرد حملہ نے ایک بار پھر پاکستان میں موجود دہشت گردوں کیلئے خلیج ممالک سے مالی معاونت اور فنڈز کی منتقلی پر
کیا نسل کشی سے مراد صرف قتل ہے؟: اقوام متحدہ نسل کشی کی جو تعریف بیان کرتی ہے، اُسکے مطابق نسل کشی اُس متواتر عمل کو کہا جاتا ہے جو کسی بھی قومی، لسانی، نسلی یا مذہبی کمیونٹی کو مکمل یا جزوی طور پر تباہ کرنے کیلئے
کرم ایجنسی کے گرد ڈیورنڈ لائن ہماری خون سے کھنچی ہوئی لکیر ہے۔ شفیق طوری:    پاکستان آرمی کے سپاہ سالار جناب جنرل قمر باجوہ نے پاراچنار کا دورہ کیا ہے۔ شہدا کے غم میں شریک ہوئے ہیں اور زخمیوں کی عیادت کی ہے۔ بہت اچھی بات اور ہم سراہتے ہیں آرمی چیف کے
سانحہ باچاخان یونیورسٹی کے شہداء ہمارا سلام ہو آپ پر – از حیدر جاوید سید: خیال یہی تھا کہ پیپلز پارٹی کی پنجاب میں نشاط ثانیہ کے لئے سرگرم عمل بلاول زرداری کی قیادت میں لاہور سے فیصل آباد تک کی پرجوش عوامی ریلی کے حوالے سے کچھ معروضات ا ور سوال پڑھنے والوں
سانحہ پاراچنار اور چند سوالات – از حیدر جاوید سید:
روزی خان : ایک چراغ اور بجھا – عامر حسینی:
سنی بریلوی حضرات کی خدمت میں، بصد ادب و احترام: پاکستان کے اکثریتی مکتب سنی بریلوی کے اندر حالیہ دور میں جو شدت پسندی یا متشدد نظریات کی ایک لہر نے جنم لیا ہے، اس کا نکتہ آغاز بغیر کسی شک و شبے کے ممتاز قادری ہے۔ افسوس ناک
پارہ چنار بم بلاسٹ : کیا مین سٹریم میڈیا مذھبی بنیاد پہ شیعہ کے خلاف ہونے والی دہشت گردی کی غیر جانبدار نیوز رپورٹنگ کرتا ہے ؟: پارہ چنار کرم ایجنسی میں 21 جنوری 2016ء میں ہوئے بم دھماکے پہ پاکستانی میڈیا کی رپورٹنگ بارے چند نکات کسی ایک میڈیا گروپ نے کرم ایجنسی کے صدر مقام پارہ چنار کے بارے میں یہ نہیں بتایا کہ
منٹو اور جبری گمشدہ بلاگرز: آج دل چاہا کے منٹو کی برسی پر کچھ لکھا جاۓ پر کچھ لوگوں کو قلم کی نوک زیادہ چھبتی ہے تو بھائی! ایک دفعہ کا ذکر ہے ایک منٹو تھا.وہ کہتا تھا زندگی ایک “آہ” ہے جو “واہ”
منٹو مرگیا تب اچھا ہوا: منٹو کے پسندیدہ افسانہ نگار گائے ڈی موپساں نے لکھا تھا، ماضی مجھے لبھاتا ہے، حال مجھے ڈراتا ہے کیونکہ مستقبل موت ہے آج کے دن 18 جنوری 1954ء کو اردو کے شہرہ آفاق افسانہ نگار سعادت حسن منٹو
سلمان حیدر: استعارے کی گمشدگی – عامر حسینی: پاکستان میں ایسے ادیب اور شاعر اب بہت کم ہیں جو ظلم،جبر ، دہشت اور فاشزم کے خلاف بذات خود ایک استعارے کی سی حثیت رکھتے ہوں اور دربار و سرکار سے بھی اتنے ہی فاصلے پہ رہتے ہوں
بنا ہے شاہ کا مصاحب ۔ عامر حسینی: دی اکانومسٹ ٹائمز کی ایک رپورٹ کے مطابق جنرل راحیل شریف سعودی عرب کے خصوصی طیارے پہ سعودی عرب کے شاہی مہمان کے طور پہ سعودی عرب پہنچے تو پہلے وہ مکّہ گئے اور عمرہ کیا پھر وہ ریاض
سال دو ہزار سولہ : تکفیری دہشت گردوں کے ہاتھوں 7 ہزار عراقی شہری ہلاک ، 12678 عراقی شہری زخمی ہوئے۔اقوام متحدہ: ادارتی نوٹ: پاکستان میں تکفیری دہشت گردوں کے حامی سلفی، دیوبندی اور جماعت اسلامی جیسی تںطیمیں اور گروپ آج کل شام کے شہر حلب کے مشرقی حصّے میں سعودی عرب،ترکی، قطر کی حمائت یافتہ سلفی تکفیری دہشت گرد تنظیم
وادی حسین (ع)، ایک بارونق شہرِ خموشاں: گزشتہ دنوں کراچی میں وادیِ حسین (ع) قبرستان جانا ہوا۔ داخل ہوتے ہی سب سے پہلا خیال اُن لوگوں کا آیا جو پاکستان میں ہونے والی شیعہ نسل کشی سے انکار کرتے ہیں۔ چھٹی کا دن نہیں تھا لیکن
پیر افضل قادری جیسے ملّا جاہل، بے علم اور دین فروش ہیں ۔ ڈاکٹر طاہر القادری: ڈاکٹر طاہر القادری نے پی جے میر کو ایک انٹرویو دیتے ہوئے سابق گورنر پنجاب سلمان تاثیر شہید کے بارے میں دوٹوک الفاظ میں کہا تھا کہ ان سے توہین اسلام ، توہین رسالت جیسے افعال کا صدور ہرگز
قبائلی علاقوں میں شیعہ اکثریت کی آبادیوں کو غیر مسلح کیوں کیا جارہا ہے؟: کیا قبائلی علاقوں میں شیعہ نسل کشی کے زمہ دار تکفیری دیوبندیوں کو غیر مسلح کردیا گیا ہے ؟ کیا تکفیری دیوبندی دہشت گردی کی سب سے بڑی جماعت اہلسنت والجماعت /سپاہ صحابہ پاکستان کو جڑ سے اکھاڑ دیا
تکفیر ازم سندھ کے لئے حقیقی خطرہ اور سندھ کو کالونی بنانے کے لئے استعمال کیا جارہا ہے ۔ صوفی حضور بخش مرکزی صدر جئے سندھ محاذ سہتو گروپ:     صوفی حضور بخش جھوک شریف سندھ میں مقیم ہیں۔وہ جئے سندھ محاذ کے قائم مقام صدر ہیں۔اور سندھ ہاری کمیٹی کے سابق مرکزی جنرل سیکرٹری بھی رہے ہیں۔وہ سندھ کے معروف قوم پرست رہنماء قاسم پتھر کے
روسی سفیر کو قتل کرنے والا شہید ہے – اوریا مقبول جان: پاکستان کے نامور تکفیری و داعشی صحافی اوریا مقبول جان نے روسی سفیر کو قتل کرنے والے ترکی پولیس اہلکار کو شہید قرار دیدیا ہے، انکا کہنا ہے کہ حلب کے مسلمانوں کے غم کی شدت کی وجہ سے
میاں سکندر ملتانی، میر و سودا کے عہد کا اہم ترین مرثیہ گو شاعر: خطہ ملتان میں مرثیہ گوئی کا آغاز واقعہ کربلا کے کچھ عرصہ بعد ہی ہو گیا تھا‘ ملتان اور سندھ ہی برصغیر کے وہ علاقے ہیں جہاں سب سے پہلے کربلا کی داستان الم سینہ بہ سینہ پہنچی۔ معروف
Defending Islam conference or defending so-called revolutionaries rebels of Syria:   Difae Islam Conference (Defending Islam Conference) This conference is being held in Pakistan to show solidarity to the Syrian rebels, its agenda being to highlight the sufferings and misery of the Muslims in Syria, Burma and Kashmir. But
مسلمانوں کی غیرتوں والا چورن صرف سعودی بادشاہوں کے مفادات کے تحفظ میں ہی کیوں راویتی جوش و جزبہ کہ ساتھ بیدار ہوتا ہے: امریکن اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ خود جس ہسپتال کا پتا بتانے سے قاصر ہے. مفتی سید عدنان کاکاخیر صاحب، جماعت الدعوه، جماعت اسلامی، اخوانی ارستو، طاہر اشرفی، سپاہ صحابہ اس ہسپتال کے غم میں ریلیان نکال رہے ہیں، جذباتی ویڈیو پیغامات
جو مین سٹریم میڈیا بلوچ نسل کشی پہ سچ بیان کرنے سے معذور ہو وہ کیسے بنگالیوں کے بارے میں سچ لکھ سکے گا: مجھے کوئی بکواس نہیں کرنی ہے 16 دسمبر 1971ء کے دن کو لیکر بلکہ اپنے پڑھنے والوں کو وہ کچھ بتانے کی کوشش کرنا ہے جو گزشتہ 44 سالوں میں نہ تو ہمیں استادوں نے بتایا ،نہ ہی ہمیں
شام اور بحرین: خودساختہ جعلی احتجاج بمقابلہ اصلی جمہوریت نواز احتجاج: ایک پرامن احتجاج ریکارڈ کرنے کے لیے بڑے پیمانے مظاہرے ہوئے ہیں۔مظاہرین جمہوریت چاہتے ہیں۔اگرچہ مظاہرین میں زیادہ تعداد ایک خاص مسلک کے مسلمانوں کی ہے لیکن ان مظاہروں کا رنگ فرقہ وارانہ نہیں ہے۔ بڑے پیمانے پہ کریک
نیولبرل مافیا ، تکفیری دیوبندیت اور سامراجیت : سولہ دسمبر کا سبق کیا ہے؟: آج سولہ دسمبر کو آرمی پبلک اسکول پشاور کے معصوم بچوں کی دوسری برسی ہے جو القاعدہ/داعش کے اتحادی تکفیری دیوبندی دہشت گردوں کے ہاتھوں شہید ہوئے تھے۔ آج فوج اور اس کی جماعت اسلامی جیسی پراکسیز کے بنگالی
حلب کی ناخوشگوار کہانی میں بتانے کو ایک سے زیادہ سچ ہیں – رابرٹ فسک – ترجمہ و تلخیص : ع-ح: اب جب بشار الاسد کی شامی افواج نے حلب کا کنٹرول دوبارہ حاصل کرلیا ہے تو مغربی سیاست دان،تجزیہ کار اور صحافی آنے والے دنوں میں اپنی کہانیوں کو دوبارہ سے ترتیب دینے جارہے ہیں۔ہمیں اب یہ معلوم کرنا