Urdu Articles Archive

یمن کی کسی کو پرواہ نہیں ہے – عامر حسینی: انیس اپریل کی شام سعودی طیاروں نے یمن کے صوبہ حاج کے دارالحکومت میں ایک شادی کی تقریب پہ مزائیل برسائے جس میں دلہن سمیت 20 افراد ہلاک ہوئے۔ مرنے والوں میں زیادہ تعداد عورتوں اور بچوں کی تھی۔
مجھے دکھ ہے کہ بے گناہی ثابت کرنے کے لئے 14 ماہ زندان میں گزارے، ثمر عباس – از فواد حسن: “مجھے اس بات کا دکھ ہے کہ اس ریاست کو 14 مہینے مجھے زندان میں ڈال کر مجھے بے گناہ ثابت کرنا پڑا۔ یہ سب شاید مجھے لاپتہ کئے بغیر بھی کیا جاسکتا تھا”۔ ایسا کہنا ہے ثمر عباس
کیمائی گیس حملہ کا فسانہ – رابرٹ فسک: The search for truth in the rubble of Douma – and one doctor’s doubts over the chemical attack ڈوما کے ملبے میں سچائی کی تلاش۔۔۔۔۔۔۔ اور کیمیائی حملے پہ ایک ڈاکٹر کے شبہات مڈل ایسٹ میں ہونے والی جنگوں
میں شام پہ غیر جانبدار نہیں ہوں – عامر حسینی: کچھ دوستوں کی جانب سے مجھ پہ ‘شام اور بشار الاسد’ کے معاملے پہ جانبداری برتنے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔یہ بھی کہا گیا کہ میں ایران نواز ہوں۔ میں اس تنقید کا خیرمقدم کرتا ہوں۔ اس لیے
انقلاب کا مدفن (کہانی) – عامر حسینی: دن ڈھل چکا تھا۔ شام کے سائے گہرے ہورہے تھے۔ دور مغرب میں سورج تانبے جیسا زرد ہوکر ڈوبنے کو تیار تھا۔مغربی افق کے کنارے پہ سرخی پھیلی ہوئی تھی۔ایسے لگتا تھا جیسے مغربی افق پہ کسی کا ماتم
دیوبندی مکتب فکر میں جہاد و تکفیر اور پشتون و پنجابی فیکٹر – عامر حسینی: فرنود عالم نے ایک پوسٹ افغان اور کشمیر جہادی پروجیکٹس اور پاکستان میں دیوبندی ریاست کے لیے ہتھار اٹھانے والے پروجیکٹس کی ساخت کے بارے میں لگائی ہے۔اور اس پوسٹ میں انہوں نے یہ کہنے کی کوشش کی ہے
شامی جنگی ڈرامے کا مرکزی ولن کون؟ – ولادیمر گولیسٹن: نوٹ : روسی نژاد پروفیسر کا تجزیہ ہمیں وہاں سے چيزوں کو دکھاتا ہے جہاں سے دیکھنے کے لیے دماغ کی بند کھڑکیوں کو کھولنا بہت ضروری ہے۔پاکستان میں دیسی لبرل صحافت بھی اتنی بنجر اور گھٹیا سی کیوں
پشتون اور پرائی جنگ – ہارون وزیر: تمام تر باتوں کا ایک متوقع جواب یہ ملے گا کہ طالبان کس نے بنائے. 33 بلین ڈالر کس نے لئے. علی وزیر کے خاندان کے 13 افراد قتل کئے گئے ہیں وغیرہ اور یہ کہ آپ کبھی وزیرستان
پشتون تحفظ مومنٹ، /تحفظات و سوالا – حیدر جاوید سید: منظور پشتین کی پشتون تحفظ موومنٹ کی ابتداء سے اب تک دوستوں اور سوشل میڈیا کے ساتھیوں کے اصرار کے باوجود لکھنے سے معذرت کرلی۔ چند احباب مصر ہوئے تو عرض کیا کچھ تحفظات مانع ہیں لکھنے میں۔ عزیز
Is Pakstan really in the Post-Taliban Era?:     The following rhetorical questions have been raised by sections of Pakistan’s “intelligentsia” and/or Commercial Liberals and need to be addressed. Are we really living in an era where the existential threat from the Taliban has receded? Has
پشتون سماج میں اینٹی شیعہ ازم کمپئن آئی ایس آئی کی پیداوار نہیں ہے, فرحت تاج – عامر حسینی: منظور احمد پشتین اور علی وزیر کے دارالعلوم حقانیہ اکوڑہ خٹک کے دورے پہ معروف ماہر پشتون تاریخ اور دانشور فرحت تاج نے ‘اختلافی نوٹ’ کے عنوان سے اپنے خیالات کا اظہار فیس بک پہ اپنی وال پہ کیا۔انہوں
منظور پشتین کو مدرسہ حقانیہ نہیں جانا چاہیے تھا؟ – محمد عامر حسینی: پشتون تحفظ تحریک کے کنوینر منظور محسود پشتون عرف منظور پشتین اور وزیر قبائل کے علی وزیر نے دار العلوم حقانیہ اکوڑہ خٹک کا دورہ کیا اور مدرسے سے اپنی تحریک کے لیے حمایت طلب کی ہے۔ اس دورے
کیا ہم پوسٹ طالبان دور میں پہنچ گئے ہیں؟ – محمد عامر حسینی: کیا ہم پوسٹ طالبان دور میں پہنچ گئے ہیں؟ کیا تکفیری دیوبندی ریڈیکل ازم اپنے زوال کو پہنچا اور اس کی جگہ صوفی بریلوی ریڈیکل ازم نے لے لی ہے؟ کیا پاکستان کی ریاست فرقہ وارانہ شناخت کی تبدیلی
یمن پہ مسلط جنگ اور میڈیا ڈسکورس – عامر حسینی: تین اپریل 2018ء کو سعودی عرب کی قیادت میں بنے فوجی اتحاد کے طیاروں نے یمن کے ساحلی شہر الحدیدہ میں داخلی مہاجرت اور بے دخلی کا شکار یمنیوں کے لیے بنے ہوئے ایک کیمپ پہ مزائیل داغے۔اس فضائی
قندوز مدرسہ پہ حملہ اور ہمارا موقف – عامر حسینی: افغانستان کا صوبہ قندوز اور ڈسٹرکٹ دشت آرچی کا ایک گاؤں جہاں پہ ایک مدرسہ میں سالانہ جلسہ تقسیم دستار فضیلت و اسناد درمیان حفاظ کرام کا انعقاد ہورہا تھا۔قندوز کے اس ڈسڑکٹ کا اکثر علاقہ تحریک طالبان اقغانستان
ہچکی لیتا ہوا سرمایہ دارانہ سماج – عامر حسینی: نیوراتی خرابی سے پیدا ہونے والی بیماری ‘ٹوریٹ سینڈروم ‘ کا شکار ایک لڑکی نینا ماتھر کا سپنا استاد بننا ہے۔وہ ایک ماڈرن ہندوستانی مڈل کلاس خاندان کی لڑکی ہے،جو ہندوستان میں نہرو کے ریاستی سرمایہ داری کے بعد
(Muhammad Faisal Younus) حقوق نسواں اور پاکستانی معاشرہ – محمّد فیصل یونس: کچھ دنوں پہلے اسلام آباد میں ایک ریلی نکالی گئی جس کا مقصد خواتین کے بنیادی حقوق کے لئے آواز بلند کرنا تھا. یہ ریلی کافی کامیاب رہی اور ملک کے روشن خیال حلقوں کی جانب سے پزیرائی بھی
مذہبی جنونیت کا ہوا کھڑا کرنے میں نواز حکومت اور اس کا حامی کمرشل لبرل مافیا ملوث ہے – عامر حسینی: تحریک لبیک یارسول اللہ کے اسلام آباد دھرنے پہ آئی ایس آئی نے جو رپورٹ سپریم کورٹ آف پاکستان کے سامنے جمع کرائی، اس رپورٹ سے یہ بات کھل کر سامنے آتی ہے کہ اسلام آباد میں اس دھرنے
سبط جعفر جیسے استاد قتل کیوں ہوجاتے ہیں – عامر حسینی: آج اٹھارہ مارچ 2018ء ہے۔اور آج سے پانچ سال پہلے اسی دن پروفیسر سبط جعفر پرنسپل گورنمنٹ ڈگری کالج لیاقت آباد(لالو کھیت) کراچی اپنی موٹر سائیکل پہ گھر واپس لوٹ رہے تھے کہ ایک سپیڈ بریکر ان کی بائیک
پشتون تحفظ تحریک اور بہار پشتون:   پشتون تحفظ موومنٹ-پی ٹی ایم کے نام سے اس وقت خیبرپختون خوا اور فاٹا کے پشتون بولنے والی نوجوانوں کی ایک سماجی تحریک سامنے آئی ہے۔پی ٹی ایم کا چہرہ اس وقت منظور پشتین نام کا ایک نوجوان
شام کا معاملہ کیا ہے؟ – عثمان قاضی: نوٹ :یو این ڈی پی کے لبنان میں ایڈوائزر عثمان قاضی شام گئے تھے اس لئے شام کے معاملے میں وہ چشم دید گواہ کی حیثیث رکھتے ہیں۔ باغیوں کا آخری ٹھکانا دمشق کے مرکز سے چھ کلومیٹر پر
ہولی کھیلوں گی – عامر حسینی: سماج میں جہاں شناختوں کے تنوع کو یک نوعی بنانے والوں کا غیض و غضب اپنے عروج پہ ہوا کرتا ہے،وہیں شناختوں کے تنوع اور کثرت کے اندر وحدت کو تلاش کرنے والوں کی جانب سے محبت کی بارش
نفسیاتی جنگ – ابوالقاسم فردوسی طوسی: شیکسپیئر کا شہرۂ آفاق قول ہر زمانے میں کیلیے ہے، ”محبت اور جنگ میں سب جائز ہے”۔۔۔ پروپیگنڈا کا پہلا اصول ہوتا ہے جھوٹ اور سچ کو خلط ملط کرکے ایک ایسا بیانیہ تیار کرنا جس سے اصل اور
پاکستان کے لبرل انگریزی پریس میں کمرشل ازم کا بڑھتا رجحان – عامر حسینی: پاکستان میں لبرل پریس سیکشن پہ کمرشل ازم کا غلبہ اس قدر زیادہ ہوگیا ہے کہ اب یہ اپنی لبرل اقدار کو بری طرح سے پامال کرتا ہے۔ جنگ-نیوز میڈیا گروپ سے وابستہ اور ایسے ہی فرائیڈے ٹائمز کی
بلوچ ـ مذہبی شدت پسندی – ذوالفقار علی ذوالفی: بلوچستان میں ہزارہ برادری کی نسل کشی میں ملوث افراد کی اکثریت ، جامعہ حفصہ اسلام آباد کے سربراہان غازی عبدالرشید و مولانا عبدالعزیز اور سیہون دھماکے کے ماسٹر مائنڈز ڈاکٹر غلام مصطفی مزاری، صفی اللہ مزاری اور نادر
لعل شہباز قلندر کے مزار پہ بم دھماکے میں تکفیری دیوبندی خطیب لال مسجد کے رشتے دار ملوث ہیں – سندھ پولیس/ رپورٹ بی بی سی اردو: قلندر کے لعل شہباز کے مزار پر خودکش بم حملے میں 87 افراد ہلاک جبکہ 329 زخمی ہوئے تھے سندھ کے صوفی بزرگ لعل شہباز قلندر کے مزار پر خودکش حملے میں لال مسجد اسلام آباد کے خطیب مولانا
پاکستانی بورس اور روستوف : ٹالسٹائی کے ناول “وار اینڈ پیس ” پہ ایک استاد کا نوٹ – تحریر : پروفیسر گولسٹین: “وار اینڈ پیس” ناول میں، ٹالسٹائی کسی بھی ادارے میں دو قسم کی درجہ بندیوں کا ذکر کرتا ہے۔خاص طور پہ آرمی میں۔ بیرونی درجہ بندی: کرنل، جنرل وغیرہ،اور ایک خفیہ درجہ بندی: کمانڈر کے قریب لوگ، سٹاف،سیکرٹری وغیرہ۔
بین المذاہب پسند کی شادی اور مسلم مخالف جذبات – رافعہ زکریا: “ہاں،جنھوں نے میرے بیٹے کو مارا مسلمان تھے لیکن ہر مسلمان کو اس میں لپیٹا نہیں جاسکتا۔فرقہ وارانہ کشیدگی پھیلانے کے لئے مجھے استعمال مت کریں،مجھے اس میں مت گھسیٹیں۔میں ہر ایک سے درخواست کرتا ہوں کہ اس کو
پشتون لانگ مارچ کو ہائی جیک مت ہونے دیں تحریر – محمد عثمان عبداللہ فاروقی: آپ جب یہ کہتے ہیں کہ پشتون لانگ مارچ میں کسی کو آنے سے روکا نہیں گیا۔اور نہ ہم روک سکتے ہیں۔تو اس کے ساتھ ذہن میں یہ بات آتی ہے کہ جب پاکستان پیپلزپارٹی کے نمائندے اس لانگ
پشتون قوم کے حقوق کی بازیابی کے لئے دھرنا: کالعدم تنظیم کی لاٹری کیسے نکلی ؟: پشتون قبائل کی جانب سے اسلام آباد میں نقیب اللہ محسود کا جعلی پولیس مقابلے میں مارا جانا ثابت ہونے کے بعد بھی ایس ایس پی راؤ انوار کے پکڑے نہ جاںے پہ دھرنا ابتک جاری ہے۔اور یہ دھرنا
پشتون و بلوچ قوم پرستی سے سپاہ صحابہ کو نتھی کرنے والے کون ہیں؟ – ریاض ملک: نقیب اللہ محسود کے ماورائے قتل کا ایشو اور پشتون قوم پرستوں کو اسٹبلشمنٹ نے تکفیری دیوبندی دہشت گرد تنظیموں کو مین سٹریم کرنے کے لیے استعمال کیا۔ اس کا ثبوت پشاور اور کراچی میں کالعدم اہلسنت والجماعت/سپاہ صحابہ
شیعہ نسل کشی کی نفی کرنے والا ادب ،ادب نہیں پروپیگنڈا ہے – محمد عامر حسینی: ظالم اور مظلوم میں برابری کی تلاش شیعہ نسل کشی پہ ابہام کا پردہ ڈالتی ہے ۔چاہے یہ فکشن کے راستے سے ہو یا تاریخ کے راستے سے یا پھر جعلی خبریں بناکر کی جائے۔جنگ اخبار میں ‘سو لفظوں
کیا عدلیہ نواز شریف سے ہار جائے گی؟ – عامر حسینی: پاکستان کی سب سے بڑی عدالت سپریم کورٹ نے سابق سینٹر اور مسلم لیگ نواز کے رہنماء نہال ہاشمی ایڈوکیٹ کو توہین عدالت کا جرم ثابت ہونے پہ ایک ماہ قید سنادی ہے۔جبکہ اسلام آباد ہائی کورٹ میں ایک
صحافت کے راجا گدھ – پیجا مستری: گدھ جاتی کی ایک عادت یہ بھی ھے کہ جب ان کے خاندان کا کوئ رکن بیمار ھو جاتا ھے تو وہ اسکے مرنے سے پہلے ھی اس پر ٹوٹ پڑتے ھیں۔ ایک اور عادت یہ بھی ھے کہ
جنسی ہراسانی اور روشن خیال مرد – حسنہ علی: جنسی ہراسانی کا کیس جو پچلے دو سالوں سے خبروں میں تھا. بلاخر اپنے انجام کو پہنچا – نامور ادیب پروفیسر سحر انصاری پر ساتھی ٹیچر ڈاکٹر نویں حیدر کو جنسی طور پر حراساں کرنے کا الزام ثابت ہوا
شیخ احمد سرہندی بھی بلاسفیمی کے الزام سے محفوظ نہیں رہے تھے – عامر حسینی: پاکستان میں کیوں کے تاریخ کا قتل بار بار ہوتا ہے۔اور ہمارے ہاں شحضیات اور ان کے افکار کو بھی اپنے مطابق ڈھال لینے کی روایت بہت پختہ ہے تو کسی شحضیت کو اس کی تاریخ میں موجود شخصیت
کابل بم دھماکہ: تکفیری دیوبندی دہشت گردی پہ کمرشل لبرل کے ہاں سناٹا کیوں ہے؟ – گل زہرا رضوی: کابل بم دھماکہ تکفیری دیوبندی دہشت گردی بارے ایک اور المناک یاد دہانی ہے۔ تکفیری دیوبندیت کا پاکستان اور افغانستان کے اندر شیعہ کا قتل عام بہت چالاکی اور آسانی سے کمرشل لبرل مافیا کی کوششوں سے چھپادیا جاتا
لہو میں ڈوبا دیرہ پھُلاں دا سہرا ( تیسرا حصّہ) – حیدر جاوید سید: پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کی ترجیحات کیا ہیں اس کا اندازہ اس بات سے لگا لیجئے کہ ہفتہ 20جنوری کی شام ڈیرہ اسماعیل خان میں ’’ نامعلوم ‘‘ موٹر سائیکل سواروں کی اندھا دھند فائرنگ سے 18سالہ نوجوان حسن
لہو میں ڈوبا دیرہ پھُلاں دا سہرا ( دوسرا حصّہ) – حیدر جاوید سید: اپنی تاریخی تہذیبی ثقافتی اور جدا لسانی شناخت کے حامل ڈیرہ اسماعیل خان کے مسائل انگنت ہیں۔ اہم ترین مسئلہ تو یہی ہے کہ سرائیکی بولنے والی شیعہ اور صوفی سُنی آبادی کی ٹارگٹ کلنگ کا سلسلہ رکنے کا
معذور بیٹی کی جان بچانے کے لئے ملک سے جارہا ہوں- ڈاکٹر محمد اعظم وائس چانسلر بارانی یونیورسٹی کا خط: پاکستان کی ایک یونیورسٹی کا وائس چانسلر اور میسا چیوسسٹ امریکن یونیورسٹی سے پی ایچ ڈی کئے ہوئے اپنی جان کے خوف سے نہیں بلکہ معذور بیٹی جس کا نام زینب ہے کی زندگی کی خاطر ملک بدر ہونے