یو فون ایس ایم ایس اور مولانا طارق جمیل – عمار کاظمی

139948343276469-original-1

مولانا طارق جمیل کی یو ٹیونز اب صرف ایک رووپیہ پچپن پیسے روزانہ میں۔ بس 5-8 نمبر لکھ کر رپلائی کریں۔
  مسکین کا خیال
  نبی کی پیدائش
– اللہ کی عدالت [ جس کا خوف شاید مولانا نے کبھی محسوس ہی نہیں کیا ]

– مظلوم کا ساتھ [ جو کبھی مولانا نے دیا ہی نہیں ]۔
ابھی کل ہی کوئی دوست کہہ رہا تھا کہ بزنس کمیونٹی نہ ہی تبلیغیوں کی کوئی پروموشن کر رہی نہ ہی بزنس پر تبلیغیوں کے کوئی اثرات ہیں۔ “میں نہ مانوں کی ضد کا کوئی علاج نہیں

ویسے یو فون والوں نے پاکستان میں کتنے دوسرے مذاہب اور مسالک کے علما کو ایس ایم ایس کے ذریعے تبلیغ کی اجازت دے رکھی ہے؟ باقی میرا سیل فون میرا پرسنل ہے۔ اس پر کیسے کسی بھی مذہب مسلک کے عالم کو تبلیغ کی اجازت دی جا سکتی ہے؟ دنیا میں فرد کے بھی کچھ حقوق ہوتے ہیں۔ اس کی نجی زندگی میں اس کی مرضی کے بغیر مداخلت کی اجازت کہاں کس ملک میں، کس مذہب کو دی جاتی ہے؟ مجھے تو یو فون کی اپنی پروموشن بھی غیر اخلاقی محسوس ہوتی ہے کہ بار بار ایس ایم ایس سے پریشانی ہوتی ہے۔ انباکس بھرا رہتا ہے۔ ضروری اور ایمرجینسی میسیجز ان کے فضول پروموشنل میسیجز کی وجہ سے نظر انداز ہو جاتے ہیں۔ جب میں نمبر اور سروسز استعمال کرنے کے پیسوں کے علاوہ ٹیکس بھی دیتا ہوں تو انھیں کیا حق پہنچتا ہے کہ وہ میرا زاتی نمبر اپنی یا کسی دوسرے کی پروموشنز کے لیے استعمال کریں؟

Comments

comments

Latest Comments
  1. niaz
    Reply -

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *


*