نیوز الرٹ: دیوبندی دھشت گردوں کی دھمکیاں، پنجاب حکومت کی بے حسی، طیبہ بخاری ملک چھوڑ گئيں

نیوز الرٹ: دیوبندی دھشت گردوں کی دھمکیاں، پنجاب حکومت کی بے حسی، طیبہ بخاری ملک چھوڑ گئيں

نوٹ:پاکستان سے شیعہ ،ہندؤ،کرسچن ،احمدی مذھبی برادریوں سے تعلق رکھنے والے پروفیشنل ،کاروباری شخصیات،اساتذہ اور مذھبی سکالرز کے ملک چھوڑنے کے رجحان میں تیزی سے اضافہ ہوتا چلاجارہا ہے اور اس کی وجہ ان مذھبی کمیونیٹیز کے اہم اور نمایاں افراد کی جان کو دیوبندی دھشت گرد تنظیم سپاہ صحابہ پاکستان/اہل سنت والجماعت/لشکر جھنگوی/ٹی ٹی پی کی جانب سے شدید خطرات لاحق ہیں

وفاقی اور صوبائی حکومتیں دیوبندی دھشت خطرے کے شکار لوگوں کی حفاظت کرنے اور ان کو سیکورٹی فراہم کرنے سے قاصر ہیں

اس حوالے سے حال ہی میں معروف شیعہ خاتون سکالر خانم طیبہ بخاری کا معاملہ سامنے آیا ہے جن کو دیوبندی دھشت گرد تنظیم کالعدم سپاہ صحابہ پاکستان کے دھشت گردوں کی جانب سے مسلسل دھمکیاں مل رہی تھیں اور ان کی گاڑی پر ایک مرتبہ حملہ بھی ہوا تھا

انہوں نے صوبائی وزیر ‌قانون رانا ثناءاللہ کو اپنے کوارڈینیٹر کے زریعے پیغام بھی دیا اور ایس ایم ایس بھی کیا لیکن کوئی رابطہ نہیں کیا گیا جب انہوں نے کوئی اقدام ہوتے نہ دیکھا تو ملک چھوڑ دیا

جب ان کے ملک چھوڑنے کی خبر عام ہوئی تو طیبہ بخاری کے مطابق ان سے رانا ثناءاللہ نے رابطہ کیا اور بتایا کہ ان کا ایس ایم ایس انہوں نے پڑھ لیا تھا لیکن رانا ثناءاللہ کے پاس اس بات کا کوئی جواب نہ تھا کہ پھر صوبائی حکومت ان کو سیکورٹی فراہم کرنے میں ناکام کیوں رہی؟

طیبہ خانم بخاری کا کہنا ہے کہ ان کا گھر اب بھی دھشت گردوں کے نشانے پر ہے ،شیعہ سکالر طیبہ خانم بخاری پاکستان کے اندر دیوبندی تکفیری خارجی آئیڈیالوجی کے خلاف علمی جہاد کرنے میں مصروف تھیں اور ان کی کوششوں سے علمی میدان میں خارجی تکفیری قوتوں کو پسپائی کا سامنا تھا

طیبہ بخاری نے فلاحی کاموں کا سلسلہ بھی شروع کیا ہوا تھا اور دھشت گردی کا نشانہ بننے والے متاثرین کی بحالی اور ان کی مدد کرنے میں بھی وہ آگے آگے تھیں اسی وجہ سے دیوبندی خارجی تکفیری دھشت گردوں نے ان کو اپنی ہٹ لسٹ میں رکھا ہوا تھا

 shia scholar tayyaba khanam bukhari left pakistan Shia Scholar Tayyaba Khanam Bukhari Left Pakistan


10 responses to “نیوز الرٹ: دیوبندی دھشت گردوں کی دھمکیاں، پنجاب حکومت کی بے حسی، طیبہ بخاری ملک چھوڑ گئيں”

  1. Shias were part of starting sectarians in Bhutto’s era, now they are getting it back. What goes around comes around. Poetic justice and all that.

  2. Meray lee-aey Allah hee kafi!

    haan magar meray wajood kay leeaey nutfa zaroori aur jeenay ko hawa ,pani ,mitti ,aag aur na janey kia kia cheezay joe hain toe khulqat-e-perwerdegar magar meri aadat joe tehri naa-shukri ki kay !

    Khuda ka shaoor khulqat kay moujood honay say hai aur yahee shaoor un kay wajood say

    ub samjh sako toe khuda taqat ka izhar khulqat say kia kerta hai aur yoon aitbaar bhee khulqat per kia kerta hai

    Aad say layker samood aur samood say laay ker loot aur nooh magar khulqat nay khulqat ko mita dala

    jahan amal ko unjaam denay kay leeaey aser zaroori ho wahan aser ko shiddat denay kay leeaey qudrat zaroorri hua kerty hai

    Yahee Qudrat aser ki soorat Taqat aur yahee taqat sher per kari zerb ki soorat Qufl

    Tubhee toe Quran nay kuch yoon fermaya k ” Usshee nay tum say pehlay loago ko paida kia taakey tum buch sako “

    Yeh tamam bayanaat sahee hain aur jhootay per Khuda ki laanat , Aur agar ubb bhee tum tukzeeb kero toe ” Aao tum upney nufso ko bulao hum upney nufso ko laatey hai ,tum upney aurton ko laao hum upney aurton ko laatey hai ,tum upney bucho ko laao hum upney bucho ko laatey hain aur hum khud bhee aa-aey aur jhootay per Khuda ki laanat keray “

    Bayshak Khuda ki laanat jub kubhi phitkaar bun ker kafir per perri Khuda ki taqat Punjataun ka hee wajood rahee

  3. طیبہ خانم بخاری کا دہشت گردی کی خوف سے پاکستان چھوڑنا کوئی عقلمندی نہیں ہے، اس ملک میں صرف اہل تشیع ، کرسچن ، ہندو، سکھ ہی نہیں بلکہ دیو بندی ذیادہ متاثر ہے، میں ایک ٹی وی کا ایک چھوٹا سا رپورٹر ہوں،دیو بندی ہوں، لیکن خطرات کتنے بتا دوں شائد محترمہ سننے کی بھی ہمت نہ کریں، لیکن اس ملک کو ہم نے دہشت گردی کی خوف سے چھوڑ دیا، تو اس کا مسئلہ ہم نے حل کردیا، ہم نے رہنا ہے، یہ ملک ہمارا ہے، اس ملک میں حالیہ جو بھی ہورہا ہے، ہمارے ساتھ بہت برا ہورہا ہے، باقی رانا ثناء اللہ کے کردار اس کے قول و فعل میں بہت تضاد ہے اس پر بحث نہ کی جائے تو بہتر ہوگا، بحر حال ہم نے اس ملک میں رہنا ہے، اس وقت یہاں گردوارا، امام بارگاہ، چرچ، مسجدتبلیغی مراکز، بازاریں سینما ہالیں سب غیر محفوظ ہیں، کیونکہ اس میں آنے والے بھی محفوظ نہیں ہے،

  4. دیوبندی دہشتگردوں کو اگر لگام نہ دی گئی تو پاکستان کا وجود ہی مٹ جائے گا۔ حکومت کو اس دن سے ڈرنا چاہئے جب شیعہ، سنی، عیسائی اور ہندو برادری نے ہتھیار اٹھا لئے۔۔ پھر ایسی خانہ جنگی ہو گی کہ پھر دیوبندیوں کو چھپنے کی جگہ نہیں ملے گی۔

  5. دہوبندی اپنی حرکتوں سے جتنا جلدی باز آ جائیں اتنا ہی ان کے لئے بہتر ہے، ورنہ ان کا انجام بہت برا ہو گا۔ کیونکہ ظالموں کا انجام ہمیشہ برا ہی ہوتا ہے،

  6. Is aurat mutta k pedawaar aur mutta keranay wali ko chahye tha k woh BB Zainab ka y kirdar ko maashal e raah banati magar mutta ki paidawaar main ye dam kahanan

  7. Shame on us, if we can’t protect the minorities, we shouldn’t be using any bad words about a female. She did not blame on us, she is simply complaining about the situation in Pakistan. It wouldn’t be long before, we all have to leave the country. Only people will live their who love to kill another human being. May Allah curse them and their supporters.