مفتی نعیم دیوبندی نے کراچی کی دیوبندی مسجد پر قبضے کا منصوبہ کیسے بنایا – رپورٹ: فیض الله خان دیوبندی

maxresdefault

السلام علیکم
وعلیکم السلام
آپ اے آر وائی میں اینکر ہو؟
جی نہیں ، رپورٹر ہوں ۔
دوسری جانب کچھ دیر وقفہ – شاید مایوسی ہوئی
اچھا ۔ ایک مسئلے میں کوریج کروانی ھے؟
جی جی، حکم کیجئے سن رہا ہوں ۔
آپ نے پٹیل اسپتال دیکھا ھے؟
وہ گلشن اقبال والا؟
جی جی ۔
اسکے قریب ایک مسجد ھے عمر ابن خطاب کے نام سے ، اس پہ قبضہ ہونے جارہا ھے ہم چاھتے ہیں آپ اسکی کوریج کریں تاکہ قبضہ رک سکے ۔ دیکھئیے جناب
پہلے تو میں عرض کردوں کہ میڈیا اس قسم کی اسٹوریز نہیں چلاتا کیونکہ یہ خاصا حساس معاملہ ھے ، ہمیں اور بھی اس طرح کی رپورٹس ملتی ہیں لیکن اسے درگزر کرتے ہیں ۔
اچھا یہ تو بات خراب ہو جائے گی ۔
چلیں یہ بتائیں کون قبضہ کر رہا ھے اور مسجد کس مسلک کی ھے ؟
مسجد تو دیو بند کی ھے اور قبضہ مفتی نعیم کرنا چاھتے ہیں ۔
کیا مطلب ھے ؟ دیو بندیوں کی مسجد پہ مفتی نعیم کیوں قبضہ کرنے لگے ؟خیریت ھے ؟
ہاں جی ۔ آپ کو اندازہ نہیں یہ چندوں کا مسلہ ھے، وہ امام مسجد کو دھمکی دے چکے ہیں کہ اگر قبضہ نہیں چھوڑا تو سپاہ صحابہ لشکر جھنگوی کا نام دیکر بند کرا دوں گا اور یہی وجہ ھے امام صاحب اب چھٹی پہ گاوں جارھے ہیں اور وہ اتنے شریف ہیں انہوں نے ابھی تک ذاتی گھر بھی نہیں بنایا دس بارہ سال امامت کرتے ہوئے ھوگئے ۔
دیکھو بھائی گھر تو میرے پاس بھی ذاتی نہیں یہ باتیں جانے دو لیکن مفتی نعیم پہ الزامات میری سمجھ سے باھر ہیں دل نہیں مانات کہ ایسا کچھ ہوسکتا ھے ۔
جناب ۔۔۔ مفتی صیب نے پولیس کو بھی پیسے کھلا دئیے ہیں ۔
اچھا آپ مجھ سے کیا چاھتے ہیں ؟
آپ آئیں پولیس کی ویڈیو بنائیں انٹرویو کریں تاکہ کسی اشتعال کے بغیر قصہ ٹل جائے کیونکہ ایک ایک ہی مسلک کا معاملہ ھے۔
چلیں میں دیکھتا ہوں جو ہوسکا، ویسے اسکی کوریج ممکن نہیں ۔
گفتگو ختم ہوگئی

Comments

comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *


*