مارگریٹ تھیچر اور نعرہ تکبیر – قاری حنیف ڈار

04AB7C8C-0637-4255-9F0D-F91790676451_w268_r1_cx0_cy7_cw0

جب امریکہ پاک ھوتا تھا اور مارگریٹ تھیچر مادرِ ملت ھوتی تھی ، تب ڈالر زم زم میں دُھلتا تھا اور دیوبندی و سلفی مجاھد سونے میں تُلتا تھا ،، ھم سمجھتے رھے کہ ھم امریکہ کو استعمال کر رھے ھیں اور امریکہ نے ھمیں استعمال کر ڈالا ،پھر جب اس نے دنیا کو یونی پولر بنا لیا اور نیو ورلڈ آرڈر لکھنے لگا تو امیر المومنین ضیاء الحق سمیت پوری جہادی ٹیم کو راکھ بنا تھا ،ان کے صرف دانت ملے تھے ٹوپی گھر سے ملی تھی – 1981کی اس ویڈیو رپورٹ میں برطانوی وزیر اعظم مارگریٹ تھیچر دورہ پاکستان کے موقع پر افغان ’’مجاہدین‘‘ سے اللہ اکبر کے نعرے لگوا رہی ہیں۔ ضیا الحق بھی محترمہ کے ساتھ ہے۔ ڈالر جہاد کی مالی ضروریات پوری کرنے کے لئے امریکہ اور سعودی عرب کی ’’امداد‘‘ کے علاوہ منشیات کا دھندہ بھی امریکی سی آئی اے نے شروع کروایا تھا (جس میں دیوبندی مدرسوں اور مولویوں نے خوب مال بنایا) =

اس خطے میں ہیروئین بنانے کی تکنیک سب سے پہلے سی آئی اے نے متعارف کروائی تھی۔ آج یہی تکفیری دیوبندی و سلفی ’’مجاہدین‘‘ امریکی سامراج کے قابو سے باہر ہیں اور منشیات، سمگلنگ، اغواہ برائے تاوان پر پلنے والے طالبان کے مختلف گروہ پاکستان سمیت مختلف ریاستوں کی پراکسی جنگیں لڑ رہے ہیں۔ افغانستان کے علاوہ پورا پاکستان بھی اسی سامراجی جنگ کے شعلوں میں جل رہا ہے

Comments

comments