دیوبندی قاتل گرفتار نہ ہوئے تو سی ایم ہائوس کا گھیرائو کرینگے، ایم ڈبلیو ایم

دیوبندی  قاتل گرفتار نہ ہوئے تو سی ایم ہائوس کا گھیرائو کرینگے، ایم ڈبلیو ایم

گزشتہ ماہ سے اب تک 52شیعہ افرادکو قتل کیا جاچکا ہے،علامہ عبداﷲ مطہر ی

کراچی (اسٹاف رپورٹر) قیام امن میں ناکامی پر وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ سمیت سندھ کے تمام وزراء اور کابینہ کو برطرف کیا جائے۔دیوبندی دہشت گرد آزاد ی سے گھوم رہے ہیں بارہ گھنٹوں میں تین شیعہ عمائدین کو ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بنایا گیا ہے ۔گزشتہ ماہ سے اب تک 52شیعہ افرادکو قتل کیا جاچکا ہے ۔ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین کے صوبائی سیکر یٹری سیاسیات عبداﷲ مطہری نے شیعہ افراد کی ٹارگٹ کلنگ کے خلاف کراچی و حدت ہاؤس علامہ علی انور ،علامہ مبشر حسن،علی حسین نقوی سمیت دیگر کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا ۔

انہوں نے کہا کہ وہ ایف سی اہلکاروں سمیت میڈیا کے دفاتر پر ہونے والے حملوں کی مذمت کرتے ہیں ،ملک اور اسلام دشمن دیوبندی طالبان کی بربادی تک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔ان کا کہنا تھا کے شہر قائد میں ملت جعفریہ کے عمائدین کی مسلسل ٹارگٹ کلنگ کی جا رہی ہے ۔ گزشتہ روز سے اب تک شہاب حیدر نقوی ،عظیم حسین اور فیروز حسین دہشت گردی کا نشانہ بن چکے ہیں۔ حکومت سندھ اور ریاستی ادارے دہشت گرد وں کے خلاف سخت اقدامات کرنے سے گریزاں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ایک طرف پاکستان پیپلز پارٹی کی اعلیٰ قیادت بلاول بھٹو دہشت گردوں اور دیوبندی طالبان کے خلاف پر عزم نظر آ رہے ہیں دوسری جانب سندھ حکومت کے وزراء اس کے بر عکس کام کرتے ہوئے نظر آتے ہیں ۔انہوں نے وزیر اعلیٰ ہاؤس کا گھیراؤ کرنے کی دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ ملت جعفریہ کے افراد کے قاتلوں کو فوری گرفتار کیا جائے۔

Source :

http://dunya.com.pk/index.php/city/karachi/2014-02-19/313554#.UwRYd_mSxW4