یمن میں سعودی جارحیت نے داعش اور القاعدہ کو مضبوط کیا ہے

Militant Islamist fighters on a tank take part in a military parade along the streets of northern Raqqa province June 30, 2014. Militant Islamist fighters held a parade in Syria's northern Raqqa province to celebrate their declaration of an Islamic "caliphate" after the group captured territory in neighbouring Iraq, a monitoring service said. The Islamic State, an al Qaeda offshoot previously known as Islamic State in Iraq and the Levant (ISIL), posted pictures online on Sunday of people waving black flags from cars and holding guns in the air, the SITE monitoring service said. REUTERS/Stringer (SYRIA - Tags: POLITICS CIVIL UNREST CONFLICT) - RTR3WJA0

یمن میں موجود القاعدہ کو کافی مضبوط گردانا جاتا ہے اور اس کے خلاف حوثیوں نے کافی مذاحمت کا مظاہرہ کیا تھا کہ ان کو اس وقت دھچکہ لگا جب یمن کے ہمسایہ ملک سعودی عرب نے اپنے ہی بھائیوں پر حملہ کر دیا۔

اس طرح یمن میں القاعدہ کے خلاف لڑنے والے حوثیوں کے خلاف سعودی عرب نے محاذ کھول کر بالواسطہ طور پر القاعدہ کی مدد کی۔

شام میں بحران کے دوران داعش ،القاعدہ اوردیگر تنظیمیں کئی بیرونی بنکوں سے امداد حاصل کرنے میں کامیاب رہی ہیں۔

یمن پر سعودی عرب کی وحشیانہ جارحیت نے داعش اورالقاعدہ کو ملک میں اپنے پیر پھیلانے کا موقعہ فراہم کیا اورایسی حالت میں جب مرکزی قیادت کمزور اورریاست حالت جنگ میں ہو دہشتگرد اپنا اثرورسوخ پھیلانے کا موقعہ ہاتھ سے جانے نہیں دیتے۔

ایک اعلیٰ یمنی عہدیدار یحیی عبدالصالح نے روس اوربین الاقوامی برادری سےمطالبہ کیا کہ وہ سعودی عرب پر دباؤ ڈال کر اسے یمن سے اپنی فوجیں باہر نکالنے اوریہاں قتل وغارت بند کرنے پر مجبور کریں۔

انہوں نےکہا کہ یمنی بحران کے حل کیلئے تمام فریقین کو مذاکرات کی میز پر لوٹنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نےکہاکہ ہمارا ہر کسی سے مطالبہ ہےکہ وہ جنگی کاروائیوں کوبند کرکے ملک کی سیکورٹی و استحکام کو یقینی بنانے کیلئے اقدامات کریں۔

Source:

http://urdu.shafaqna.com/UR/31433

Comments

comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *


*