Pakistani media blacks out Shia mosque bombing in Kuwait – by Laleen Ahmad

 

p1

Yesterday the Takfiri terrorists of the Daish (IS) staged a suicide attack in a Shia mosque i Kuwait. There were over 2000 worshippers in the mosque at the time of the bombing. So far 70 Shia Muslims have died. Many of the injured worshippers are fighting for their lives. It is feared that many more will die. The Islamic State has proudly owned up the bombing and has said its assassins will continue to the Shias all over the world.

The media all over the world has reported the suicide bombing. They have clearly identified the killer, his backers (i.e., the IS), and the victims (the Shia worshippers). Below are just a few examples of the international media reporting:

BBC: http://www.bbc.com/news/world-middle-east-33287136

Al-Jazeera: http://www.aljazeera.com/news/2015/06/deadly-blast-hits-kuwait-mosque-friday-prayers-150626103633735.html

ABC, Australia: http://www.abc.net.au/news/2015-06-26/suicide-attack-on-shiite-mosque-in-kuwait-kills-25/6577224

Wall Street Journal: http://www.wsj.com/articles/deadly-blast-hits-kuwait-mosque-1435319403

Reuters: http://www.reuters.com/article/2015/06/26/us-kuwait-blast-idUSKBN0P618L20150626

The Independent: http://www.independent.co.uk/news/world/middle-east/kuwait-mosque-explosion-possible-isis-bomb-attack-launched-on-shia-muslims-during-ramadan-friday-prayers-10347740.html

CNN: http://edition.cnn.com/2015/06/26/world/kuwait-mosque-attack/

 

The Pakistani media blacked out the Kuwait. The following newspapers did not publish anything about the bombing:

Express Tribune: http://tribune.com.pk/

Dawn: http://www.dawn.com/

The Nation: http://nation.com.pk/

Pakistan Observer: http://pakobserver.net/

Those who reported the suicide bombing played the typical game of obfuscation. For instance, The News reported that a mosque was bombed, but the word Shia did not appear at all. Below is the complete report published by The News:

 

IS suicide bomber kills 27 at Kuwait mosque

 
June 26, 2015 – Updated 239 PKT
From Web Edition

p2

 

Kuwait City: An Islamic State suicide bomber struck a mosque in the Kuwaiti capital during Friday prayers, killing 27 people as the Gulf state declared an “all-out confrontation” with terrorism.

Health Minister Ali al-Obaidi told the state-run Kuwait Television the number of dead had risen to 27 in addition to 222 wounded in the first ever suicide attack on mosques in the oil-rich emirate.

The toll in the attack, carried out in the holy month of Ramazan, is one of the largest in Kuwait´s history.

The cabinet announced after an emergency meeting that all security agencies and police have been placed on alert to confront what it called “black terror”.

“The cabinet stresses that it will take whatever measures necessary to root out this scourge, and declares a relentless all-out confrontation with these terrorists,” said a statement after the meeting.

It also declared Saturday a day of mourning.

The IS-affiliated group in Saudi Arabia, calling itself Najd Province, said militant Abu Suleiman al-Muwahhid bombed the mosque.

The Najd Province group has claimed similar bombings at mosques in Saudi Arabia in recent weeks.

After the attack, a security official said “it is a suicide bombing”, and witnesses said a suicide bomber entered the mosque during weekly Friday prayers.

http://www.thenews.com.pk/article-189273-IS-suicide-bomber-kills-27-at-Kuwait-mosque

 

Daily Dunya reported the Kuwait bombing along that in Kuwait along with the bombing in Tunisia and the beheading in Frace. To its credit, it mentioned that the mosque was “Shia”.

 

کویت , تیونس اور فرانس میں دہشتگردی , 63 ہلاک , 237 زخمی

کویت سٹی میں اہل تشیع کی مسجد میں نماز جمعہ کے دوران خودکش دھماکہ، 25نمازی شہید، 200سے زائد زخمی ، داعش نے حملے کی ذمہ داری قبول کر لی، پاکستان کی مذمت تیونس کے سیاحتی مقام سوستہ میں مسلح افراد نے ہوٹل کے باہر ساحل پر موجود سیاحوں پر فائرنگ کر دی، 37ہلاک، 36زخمی،جوابی کارروائی پر ایک حملہ آور مارا گیا، دوسرا گرفتار

فرانس کے شہر لیون کے قریب امریکی فیکٹری میں داعش کے مبینہ جنگجوؤں کا حملہ،ایک شخص کا سرقلم کر دیا، ایک زخمی، ایک حملہ آور گرفتار، صدر اولاند بیلجیئم سے واپس پہنچ گئے کویت سٹی، سوسہ، لیون(دنیا نیوز، ایجنسیاں) کویت ، تیونس اور فرانس میں ایک ہی دن دہشتگردی کے مختلف واقعات کے نتیجے میں 63 افراد ہلاک اورکم ازکم 237 زخمی ہو گئے ۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق دہشتگردی کا پہلا واقعہ کویت سٹی میں پیش آیا جہاں علاقے الصوابر میں اہل تشیع کی مسجد امام الصادق میں جمعہ کی نماز ادا کی جارہی تھی کہ اس دوران زوردار دھماکہ ہو گیا۔ وزارت داخلہ نے تصدیق کی ہے کہ دھماکہ خودکش تھا، حملے میں 25 نمازی شہید اور 200سے زائد زخمی ہوگئے جن میں بچے بھی شامل ہیں۔ عینی شاہد نے بتایا ہے کہ مسجد میں نمازجمعہ کی دوسری رکعت کے وقت حملہ آور اندر داخل ہوا اور خود کو دھماکے سے اڑا دیا ۔ دھماکے کے نتیجے میں متعدد افراد خون میں لت پت پڑے تھے جبکہ بعض کے چیتھڑے اڑ گئے تھے ۔ دھماکہ اتنا شدید تھاکہ مسجد کو بھی شدید نقصان پہنچااور ہر طرف ملبے کے ڈھیر لگ گئے جس کے نیچے لاشیں بھی دب گئیں ۔زخمیوں اور لاشوں کو فوری طور پر قریبی ہسپتالوں میں منتقل کردیا گیا جہاں بعض کی حالت نازک بتائی جاتی ہے جس سے ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے ۔ایک رکن پارلیمنٹ کے مطابق حملے کے وقت مسجد میں 2 ہزار افراد موجود تھے ۔ دھماکے کے بعد سکیورٹی فورسز کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی اور علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔ بم دھماکے کی اطلاع ملتے ہی کویت کے امیر شیخ صباح الاحمد الصباح نے بھی مسجد امام الصادق کا دورہ کیا ۔ پاکستانی دفتر خارجہ نے خودکش حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان دکھ کی اس گھڑی میں متاثرہ خاندانوں کے ساتھ ہے ۔ داعش نے سوشل میڈیا پر جاری بیان میں حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے ۔ دوسرا واقعہ تیونس کے سیاحتی مقام سوسہ میں پیش آیا جہاں مسلح افراد کے دو ہوٹلوں پر حملے کے نتیجے میں کم از کم 37سیاح ہلاک جبکہ 36 افراد زخمی ہو گئے ۔ مسلح حملہ آوروں نے سوسہ کے امپیریل مرحبا ہوٹل کے باہر ساحل پر موجود سیاحوں، ملازمین اور دیگر افراد پر کلاشنکوف سے فائرنگ کر دی۔ وزارت داخلہ نے حملے میں 37سیاحوں کے مارے جانے کی تصدیق کی ہے جن میں سے زیادہ تر غیر ملکی ہیں۔ وزارت صحت کے مطابق مرنے والوں میں تیونس، برطانیہ،جرمنی اور بلغاریہ کے شہری شامل ہیں۔ حملے کے بعد سکیورٹی فورسز نے ہوٹل کو گھیرے میں لے لیا۔ جوابی کارروائی میں ایک حملہ آور مارا گیا جبکہ اس کے مشتبہ ساتھی کو گرفتار کر لیا گیا۔ ہوٹل کے ایک ملازم نے صحافیوں کو بتایا کہ فائرنگ کرنے والا شخص نوجوان اور حلیے سے سیاح لگ رہا تھا جو موقع پر پہنچنے والے پولیس اہلکاروں کی جوابی فائرنگ سے مارا گیا ۔ تیونس میں رواں سال کے دوران دہشت گردی کا یہ دوسرا بڑا واقعہ ہے جس کی ذمہ داری تاحال کسی نے قبول نہیں کی ۔تیسرے واقعے میں فرانس کے شہر لیون کے قریب ایک فیکٹری پر داعش کے مبینہ حملے میں ایک شخص کا سر قلم کر دیا گیا جبکہ دوسرا زخمی ہو گیا ،کچھ اطلاعات کے مطابق زخمیوں کی تعداد زیادہ ہے ۔ذرائع کے مطابق فیکٹری پر حملے کے دوران کئی چھوٹے دھماکے بھی ہوئے ۔ بعد ازاں پولیس کو جائے وقوعہ سے ایک سربریدہ لاش ملی ہے ۔ فضائی مصنوعات بنانے والی ‘ایئر پراڈکٹس’ نامی یہ کمپنی امریکی ہے ۔بیلجیئم کے دورے پر گئے ہوئے فرانس کے صدر اولاند دورہ مختصر کرکے واپس پہنچ گئے ، روانگی سے قبل میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے حملے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ دو افراد نے فیکٹری کی عمارت سے گاڑی ٹکرا دی، اس میں کوئی شک نہیں کہ وہ عمارت تباہ کرنا چاہتے تھے ۔ اطلاعات کے مطابق مبینہ حملہ آوروں کی تعداد دو تھی جن میں سے ایک کو گرفتار کر لیا گیا ہے ۔ جائے وقوعہ سے شدت پسند تنظیم داعش کا جھنڈا بھی ملا ہے ۔ اے ایف پی کے مطابق سرقلم کیے جانے والے شخص کے سر پر ٹیڑھے میڑھے الفاظ میں عربی میں کچھ لکھا ہوا ہے

http://dunya.com.pk/index.php/pakistan/2015-06-27/588283#.VY5qgvmqqko

 

Nawa-e-Waqt also reported the Kuwait suicide bombing, but it did not mention that any Shia worshippers were killed.


کویت : مسجد میں خودکش دھماکہ،27 افراد جاں بحق،202 زخمی ، داعش نے ذمہ داری قبول کر لی

Share

صحافی  |  عبدالشکور ابی حسن

کویت (عبدالشکور ابی حسن سے+ ایجنسیاں+ نوائے وقت رپورٹ) کویت کے دارالحکومت کی ایک مسجد میں ہونے والے خود کش دھماکے میں کم سے کم 27 افراد جاں بحق اور 202 زخمی ہو گئے۔ خود کش دھماکہ امام صادق مسجد میں ہوا جو شہر کے مشرقی علاقے الصوابیر میں واقع ہے۔ شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ سے منسلک ایک تنظیم نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کر لی۔ خیال رہے کہ دولت اسلامیہ نے حالیہ دنوں میں ہمسایہ ممالک سعودی عرب اور یمن میں بھی اس طرح کے حملے کئے تھے۔کویت کے گورنر نے بتایا خود کش دھماکے میں 27 افراد ہلاک ہوئے، کویت کی پارلیمان کے ایک رکن اور اس حملے کے عینی شاہد نے بتایا کہ زوردار دھماکے کے وقت مسجد میں 2,000 افراد موجود تھے۔ الجزیرہ ٹی وی کے مطابق دھماکے کے وقت کویت کے امیر اس جگہ سے گزر رہے تھے۔ کویتی وزارت داخلہ کے مطابق 27 افراد جاں بحق ہوئے۔ غیرمصدقہ اطلاعات کے مطابق ہلاک ہونیوالے افراد کی تعداد میں اضافے کا خدشہ ہے۔ کویتی وزیراعظم شیخ جابر المبارک الصباح کا کہنا ہے کہ یہ حملہ قومی یکجہتی کو نقصان پہنچانے کی کوشش ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تاہم یہ کام دشمنوں کیلئے بہت مشکل ہے اور ہم اس سے کہیں زیادہ طاقتور ہیں۔ ریاستی ٹی وی کے مطابق وزیراعظم نے جائے وقوعہ کا دورہ کیا۔ کویت امیر شیخ صباح الاحمد الجابر الصباح نے شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہاکہ انسانیت سوزی کی انتہاہوگئی۔ اس حادثہ میں جان بحق کویتی میرے بچے تھے مجھے انتہائی دکھ ہوا ہے جنہوںنے یہ کارروائی ہے کہ انکے پیچھے افراد کے ساتھ آہنی ہاتھوں نمٹاجائیگا ۔کویت ایک پرامن ملک ہے جہاں ہر مذہب عقیدے کو اپنی مذہبی رسومات مکمل آزادی ہے ہم نے ہمیشہ فرقہ واریت کی مذمت کی ہے۔ کویت کے ولی عہد شیخ نواف الاحمد الجابر الصباح، وزیراعظم شیخ جابرالمبارک الصباح، وزیر داخلہ شیخ محمد خالد الصباح نے اس سانحہ میں زخمیوں کی الامیری ہسپتال میں عیادت کی اور ان کی صحت یابی کیلئے دعا کی۔ پاکستان کی طرف سے کویت کی مسجد میں حملے کی مذمت کی گئی۔ ترجمان دفتر خارجہ قاضی خلیل اﷲ نے اپنے بیان میں کہا کہ پاکستان کویت کی ایک مسجد میں نماز جمعہ کے دوران ہونیوالے جان لیوا دہشت گردانہ حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتا ہے۔ پاکستانی عوام اور حکومت اس حملے میں جاںبحق افراد کے لواحقین سے تعزیت کا اظہار کرتے ہیں اور زخمیوں کو جلد صحت یابی کیلئے دعا گو ہیں۔ پاکستان کویتی حکومت سے ماہ رمضان کے مقدس مہینے میں مسجد میں ہونے والے اس حملے پر افسوس کا اظہار کرتا ہے اور ہر قسم کی دہشت گردی کے اپنے عزم کو دہراتا ہے۔ اقوام متحدہ کے جنرل سیکرٹری بان کی مون نے کویت میں مسجد پر خودکش حملے اور ہلاکتوں پر افسوس کا اظہار کیا۔

http://www.nawaiwaqt.com.pk/E-Paper/Lahore/2015-06-27/page-1/detail-6

Jang, like its sister publication The News, blacked out the word “Shia”:

http://jang.com.pk/jang/jun2015-daily/27-06-2015/main.htm

The reader can draw their conclusions themselves.

http://www.express.com.pk/epaper/PoPupwindow.aspx?newsID=1102927662&Issue=NP_LHE&Date=20150627

http://dailypakistan.com.pk/latest

p3

 

p4

Comments

comments

Latest Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *


*