برما کے مظلوم مسلمان اور پاکستان کے فیوز بلب – عمار کاظمی

11401253_10152885374649249_3820631831248548210_n

ہم تو ہمیشہ سے انسان کے قتل کو انسانیت کا قتل دیکھتے رہے ہیں چنانچہ میانمار کے لوگوں کے قتل کی بھی شدید مذمت کرتے ہیں لیکن۔۔۔ جب احمدیوں کی قبروں کے کتبے اکھاڑے جاتے ہیں، جب لاشیں پامال کی جاتی ہیں، جب احمدی خاندان زندہ جلایا جاتا ہے، جب عیسائی میاں بیوی زندہ جلائے جاتے ہیں، جب بسوں سے نکال شناختی کارڈ دیکھ کر شیعہ مارے جاتے ہیں، جب شیعہ ہزارہ کی سینکڑوں لاشیں ایک ہی وقت میں گرائی جاتی ہیں، جب پارہ چنار میں گاوں کے گاوں پر گولے برسائے جاتے ہیں، لشکر کشی کی جاتی ہے، سینکڑوں ہزاروں شیعہ مارے جاتے ہیں،

جب اسماعیلی شیعہ مارے جاتے ہیں، جب ملک بھر کے شیعہ اور بریلوی، صوفی سنی محض اپنے عقائد کی وجہ سے مار دیے جاتے ہیں، تب اس گھر کے بے غیرت کرداروں پر بات کرتے غیرت کیوں سو رہی ہوتی ہے؟ جب مولوی عزیز جیسے کھلے دہشت گرد کی گرفتاری کی بات ہوتی ہے تو تمھاری اس بنانا سٹیٹ کا بے غیرت وزیر اسے گرفتار نہ کرنے کی خاطر امن و امان خراب ہونے کی بہانے کیوں بناتا ہے؟ بولو کہ بول کے ساتھ دو طرفہ سچ بھی بولنا چھوڑ دیا؟ تم لوگ موم بتی لبرلز کو تنقید کا نشانہ بناتے ہو۔ لیکن وہ تم سے تو بہتر ہی ہیں۔ کم از کم وہ اپنے گھر کی بربادی پر بھیڑیوں کے خلاف کوئی اُمید کی موم بتی تو جلاتے ہیں۔ تم لوگ تو نرے “فیوز بلب” ہو۔

Comments

comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *


*